عوام کی رئیل اسٹیٹ کاروبار سےآگاہی کے لئے سیمینارز ہونے چاہیئے،منظور علی

0
12

منظور علی آشیانہ اسٹیٹ اینڈ کنسٹرکشن کمپنی کے مالک ہیں جو اپنے دوست رضا سولنگی کے ہمراہ گذشتہ کئی دہائیوں سے رئیل اسٹیٹ بزنس سے وابسطہ ہیں،کراچی کی رئیل اسٹیٹ مارکیٹ میں منظور علی کا نام جانا پہچانا ہے، اسی لئے پراپرٹی پوسٹ نے جناب منظور علی سے ایک انٹرویو کا انعقاد کیا جسمیں ہونے والی گفتگو حسب ذیل ہے۔

پراپرٹی پوسٹ : آپکے تجربے کے مطابق پاکستانی عوام رئیل اسٹیٹ پر کس درجہ اعتماد رکھتی ہے ؟
منظور علی:  پاکستان میں رئیل اسٹیٹ کاروبار اصل میں اپنی جان پہچان مارکیٹ میں نام اور زرائع سے کام ملتا ہے ورنہ تقریبا عوام کا اعتماد ۵۰ فیصد ہے کچھ یقین کرلیتے ہیں کچھ نہیں

ؐپراپرٹی پوسٹ : لینڈ مافیا یا زمینی دھوکہ دہی سے کیسے نپٹا جاسکتا ہے ؟
منظور علی: اصل میں پہلے شعور آنا ضروری ہے کاروبار سے متعلق اور اس کیلئے ضروری ہے سیمینار منعقد کیئے جائیں جیسے زمینوں کی کئی قسمیں ہیں اور الگ الگ مقاصد کیلئے بیچی یا خریدی جاتی ہیں تو جتنی بھی زمین کی معلومات ہیں وہ لازمی ہونا چاہیئے ایک رئیل اسٹیٹ بزنس کرنے والے کو اور جب اُسے ہر جگہ کی زمین سے آگاہی ہوگی تو اُسے کوئی دشواری نہیں ہوگی۔

ؐپراپرٹی پوسٹ : کیا کبھی ایسا وقت بھی آیا کے جب لگا ہو کہ کوئی اور بزنس کرنا چاہیے کوئی خاطرخواہ نتائج نہ مل رہے ہوں آپکو اور دل بھرنے لگ گیا ہو ؟
منظور علی : نہیں ابھی تو میں اپنی منزل پر ہی نہیں پہنچا تو اداسی یا خاطرخواہ نتائج کی توقع کیسی، میری منزل ابھی کافی آگے ہے تو میں ذرا بھی مایوس نہیں۔

ؐپراپرٹی پوسٹ :: رئیل اسٹیٹ کے حوالے سے ہی کوئی زندگی کا خاص واقعہ ؟
منظور علی: اکثر ہوتے رہتے ہیں جیسے ہمارے دوست یا نئے کام کرنے والے ہمیں اپنے پروجیکٹ کی شروعات پر دعوت دیتے ہیں چونکہ وہ ناتجربہ کار ہوتے ہیں اور میں انھیں ان کیلئے کوئی بہتر نصحیت کرتا ہوں اور وہ ناجانے کس سوچ میں اس پر عمل نہیں کرتے اور نقصان اُٹھا لیتے ہیں تو ان کے نقصان کا دکھ تو ہوتا ہے پر مجھے اپنے اوپر خوشی ہوتی ہے کے میرا تجربہ میرے کام آیا اور میں اب تک جو سیکھا وہ میرے لیئے فائدہ مند رہا ہے اور میرا خدشہ درست ثابت ہوا۔

ؐپراپرٹی پوسٹ ::عوام کو کیا رائے دینا چاہینگے کے انھیں کسطرح اور کہاں اپنا سرمایہ لگانا چاہیئے ؟
جواب: پہلے تو لوگوں کو یہ دیکھنا چاہیئے کے جس رئیل اسٹیٹ مین کے پاس آپ گئے ہیں وہ آپ اور آپ کے سرمائے سے کتنا مخلص ہے کیا اس کی خود سے ذیادہ آپکے لیئے ہے کیا اسے حالات و معاملات اور طریقہ کار کا پتا ہے کیا وہ اس اہل بھی ہے کم سے کم عوام کو یہ ضرور دیکھ لینا چاہیئے ۔

پراپرٹی پوسٹ : ہمارے اخبار کے حوالے سے آپکی کیا رائے ہے ؟

منظور علی: پراپرٹی کے حوالے سے مکمل اور جامعہ آپکے اخبار اور اس کمپنی کا سُن کر انتہائی خوشی ہوئی کیونکہ اس حوالے سے اب تک کوئی بھی ایسا اخبار نہیں تھا اور جو خبریں بھی ملتی تھی کسی دوسری اخباروں میں چھوٹے چھوٹے اشتہارات یا اپنے دوستوں سے موصول ہوتی تھیں لیکن اب یہ ایک رئیل اسٹیٹ کے حوالے سے اخبار کا شائع ہونا ایک اچھی خبر ہے مجھے واقعی بہت خوشی ہوئی۔

پراپرٹی پوسٹ :: یعنی اس شعبے کے حوالے سے یا رئیل اسٹیٹ کا بزنس کرنے والوں کے مسائل پر آواز اُٹھانے کے لئیے پلیٹ فارم ہونا ضروری ہے ؟
منظور علی: جیسے سرکاری اور غیرسرکاری پلیٹ فارم ہوتے ہیں ان میں ایک اتحاد ہوتا ہے ہماری بھی خواہش ہے کے رئیل اسٹیٹ کیلئے بھی ایک پلیٹ فارم ہو اور ہم میں اتحاد ہونا چاہیئے۔

پراپرٹی پوسٹ :: آپکی نظر میں اس شعبے کے مسائل کیا ہیں اور انکے حل کیلئے متعلقہ اداروں سے کیا مطالبہ کرنا چاہینگے؟
منظور علی: اکثر ہمیں پریشانیوں کا سامنا رہتا ہے جب ہم گراونڈ پر کام کررہے ہوتے ہیں ہماری ہر ایک چیز قانونی ہوتی ہے پھر بھی حکومتی ادارے یا پولیس رشوت کیلئے ہمیں تنگ کرتے ہیں اور ہمیں رشوت دینے کیلئے مجبور کیا جاتا ہے یا پھر جسکی آگے تک پہنچ ہو وہ تو سفارش کروالیتا ہے اور ایک اہم بات یہ ہے کے گورنمنٹ کی طرف سے کوئی سپورٹ نہیں ہے ۔

ؐپراپرٹی پوسٹ :: ابھی آپ کن کن پراجیکٹس پر کام کررہے ہیں ؟
منظور علی: ابھی اسکیم ۳۳ گلستانِ جوہر اور گلستان سکینہ فاطمہ سوسائٹی میں میرا کام چل رہا ہے اور میری امید ہے کے میں اپنے کام سے اس سوسائٹی کو کامیاب بناونگا اور اس کا ایک اچھا نام پیدا کرونگا اور میری خواہش ہوتی ہے کے میں جس کے ساتھ بھی کام کروں یا جسکو بھی رائے دوں کام کے حوالے سے وہ اچھی ہو تاکہ کسی کا نقصان نہ ہو اور میری پہچان بھی ایک اچھے نام سے کی جائے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here