لیاقت مارکیٹ کے 4 ہزار سیلزمین کا روزگار خطرہ میں پڑگیا، تنخواہیں دینے سے محروم – خصوصی انٹرویو

0
11
لیاقت مارکیٹ کراچی کی ایک بڑی مارکیٹ ہے جہاں پر تقریباً ہزار دکانیں ہیں جن سے 4 ہزار افراد کا روزگار وابسطہ ہے لیکن 45 روز سے جاری لاک ڈان نے ان چار ہزار افراد کا روزگار خطرہ میں ڈال دیا ہے کیونکہ تاجروں کا کہنا ہے کہ اگر لاک ڈان ختم نہیں ہوا اور ان کو کاروبار کھولنے کی اجازت نہیں دی گئی تو یہ اس ماہ ملازمین کو تنخواہ دینے سے قاصر ہونگے
پراپرٹی پوسٹ کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے لیاقت مارکیٹ تاجر اتحاد کے صدر جناب محمد حنیف گھانچی نے کہا کہ سندھ اور وفاق کی سیاسی چکی میں کراچی کی عوام کو نا پیسا جائے، انکے ہمراہ تاجر ایسوسی ایشن کے نائب صدر محمد انیس بھی موجود تھے۔
انہوں نے کہا کہ لیاقت مارکیٹ ایشیاء کی سب سے بڑی مارکیٹ ہے اس کی خوبی یہ ہے کہ یہاں سونے سے لے کر سوئی تک ہر چیز مل جاتی ہے۔ لیکن 45 روز سے جاری لاک ڈاون کی وجہ سے دکاندار بھی پریشان ہیں اور گاہک بھی پریشان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ایس او پیز بناکر دیے جائیں ہم ایس او پیز پر عمل کرنے کو تیار ہیں، اگر ایس او پیز پر عمل نہ ہو تو پھر بھلے ہماری دکانیں اور مارکیٹس بند کرادیے گا۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم وزیراعظم پاکستان عمران خان سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اس طرف دیکھیں، انہوں نے ہر چیز کھلوا دی ہے ان تاجروں کی طرف بھی غور کریں

محمد حنیف گھانچی کا مزید کیا کہنا تھا کہ جانیے اس ویڈیو میں

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here