پاکستان پراپرٹیپراپرٹی گائیڈپراپرٹی نیوز

قبضہ مافیاء کے خلاف حکومت سندھ کا بڑا فیصلہ،

سندھ بھر میں 2003ء تک آباد کچی آبادی قوانین کی شرائط پر پورا اترنے والی کچی آبادیوں کو مالکانہ حقوق دیں گے، عدالت عظمیٰ کے احکامات کی روشنی میں کچی آبادیوں اور گوٹھوں میں فلاحی پلاٹوں پر ناجائز قبضوں کیخلاف سخت کارروائی ہوگی فلاحی مقاصد کے علاوہ فلاحی پلاٹوں پر ناجائز تعمیرات اور چائنا کٹنگ کرنے والے فوری طورپر پلاٹ خالی کریں ورنہ ان کا سخت محاسبہ ہوگا، SKAA کو فوری طورپر فلاحی پلاٹوں پر دی جانے والی لیزیں کینسل کرنے کے احکامات دے دیے ہیں۔

ان الفاظ کا اعادہ صوبائی وزیر ہیومن سیٹلمنٹ اور خصوصی ترقیات (محکمہ کچی آبادی) غلام مرتضیٰ بلوچ نے ’’کاگف‘‘ کی جانب سے دی گئی تجاویز کی روشنی میں سندھ بھر میں 30 جون 1997ء کے بجائے 2003ء تک آباد کچی آبادیوں اور گوٹھوں کو مالکانہ حقوق دینے کے اعلان پر اظہار تشکر کے لیے کچی آبادیز اینڈ گوٹھ فیڈریشن آف پاکستان ’’کاگف‘‘ کے تاحیات چیئرمین (سفیرامن) صاحبزادہ احمد عمران نقشبندی کی قیادت میں ملنے والے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وفد میں ملک اسلم گورکھا، ندیم شہزاد، سید معین الدین شاہ، ملک فیصل کھوکھر، مشیر قانونی احمد مہران گورایہ ایڈووکیٹ، محمد ایوب ایڈووکیٹ، محمد جنید احمد، اقبال خان اور دیگر شامل تھے۔ وفد نے صوبائی وزیر مرتضیٰ بلوچ کو کچی آبادی کا قلمدان دوبارہ ملنے پر مبارکباد اور اظہار تشکر کرتے ہوئے کچی آبادیوں، گوٹھوں کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا۔

کراچی کے شہریوں کو سستی و رہائشی سہولیات کی فراہم کئے جائنگے۔

اس موقع پر صوبائی وزیر مرتضیٰ بلوچ نے کہا کہ PPP کے چیئرمین بلاول زرداری کی ہدایت پر PPP کے منشور اور کچی آبادی قوانین کی روشنی میں وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی قیادت میں سندھ بھر کی 14 سو سے زائدکچی آبادیوں اور گوٹھوں کے مکینوں کا معیار زندگی بلند کرنے کے لیے سندھ کچی آبادی اتھارٹی خصوصی اقدامات کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ بھر میں 1997ء کے بجائے 2003ء تک آباد کچی آبادیوں اور گوٹھوں کو مالکانہ حقوق دیے جائیں گے اور سماجی اداروں کے ساتھ مل کر تمام کچی آبادیوں اور گوٹھوں کا ری سروے کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ بارشوں سے کچی آبادیوں اور گوٹھوں میں ہونے والے نقصانات کی نشاندہی کے لیے SKAA کو احکامات جاری کردیے ہیں۔ رپورٹ آنے کے بعد نقصانات کا ازالہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کوشش کریں گے، سندھ میں مزید کچی آبادیاں قائم نہ ہوں اور ان کی روک تھام کے لیے کچی آبادی کے مکینوںکے لیے سستی رہائشی اسکیمیں بنائی جائیں، ہوسکتا ہے کوئی ایسی اسکیم بھی لانچ کردیں جس سے معمولی معاوضہ لے کر فلیٹ بنا کردیے جاسکیں۔ انہوں نے کہا کہ چیئرمین بلاول زرداری کا مشن ہے کہ کچی آبادیوں اور گوٹھوں کا معیار زندگی بلند کیا جاسکے۔

ہمارا Youtube Channel سبسکرائب کریں

مزید خبروں کیلئے ہمارا Facebook Page وزٹ کریں

Tell to Others
0Shares
Tags

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker